kashmir-latest-news 36

”14 سے 15 سال کے کشمیری لڑکوں کو اٹھا کر تشدد کیا جاتا ہے اور ان کے منہ کے آگے۔۔۔“

بھارتی فوج مقبوضہ کشمیر میں دہشت پھیلانے کیلئے کیا کر رہی ہے؟ بھارتی پنجابی نے تہلکہ خیز انکشاف کر دیا

لاہور مودی سرکاری کی پالیسیوں اور مقبوضہ کشمیر میں مظلوم عوام پر ظلم و بربریت پر بھارت سے ناراض ایک بھارتی پنجابی نے انکشاف کیا ہے کہ بھارتی فوج نے مقبوضہ کشمیر میں 14 سے 15 سال کے لڑکوں کو اٹھایا اور ان پر شدید تشدد کیا جبکہ ان کی چیخیں لاﺅڈ سپیکر کے ذریعے گاﺅں والوں کو سنائی گئیں۔

تفصیلات کے مطابق بھارتی شہری نے اپنے ویڈیو پیغام میں بتایا کہ مقبوضہ کشمیر میں تعینات بھارتی فوجی 14 سے 15 سال کے لڑکوں کو اٹھا کر لے جاتے ہیں اور انہیں بدترین تشدد کا نشانہ بناتے ہیں جبکہ ان کے منہ کے سامنے مائیک رکھ کر گاﺅں کے لوگوں کو ان کی چیخیں سناتے ہیں تاکہ لوگوں میں دہشت پھیلے، لعنت ہے ایسی فوج پر جو چاہتے ہی کہ کشمیری ان بچوں کی چیخیں سن کر ڈریں لیکن لیکن ڈرنے والی تو کوئی بات ہی نہیں، نہ وہ پہلے ڈرتے تھے اور نہ ہی اب ڈریں گے۔

بھارتی شہری کا کہنا تھا کہ مودی حکومت یہ راگ الاپ رہی ہے کہ کشمیر میں سب کچھ ٹھیک ہے، اگر سب کچھ ٹھیک تھا تو راہول گاندھی اور دیگر اپوزیشن رہنماﺅں کو مقبوضہ کشمیر میں داخل ہونے سے کیوں روکا گیا، انہیں معلوم تھا کہ پول کھل جائے گی جبکہ پول تو وہیں کھل گیا تھا جب ایک عورت جہاز میں پہنچ گئی اور رو رو کر بتاتی رہے کہ ان کیساتھ کیا ہو رہا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں